عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 175632

کچھ سال پہلے میں نے ایک مفتی صاحب سے سُنا تھا کہ اگر جانماز اتنی نرم ہو کے ہاتھ اندر جارہے تو نماز نہیں ہوگی۔ لیکن بہت ساری مساجد میں جانماز اتنی نرم رکھنے لگے ہیں کہ امام کے وزن سے ہاتھ اور پیشانی جانماز کے اندر جا رہی ہے ۔ آپ سے درخواست ہے کہ آپ اس مسئلہ پر روشنی ڈالیں۔

Published on: Jan 12, 2020

جواب # 175632

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:359-244/Sd=5/1441



مسئلہ یہ ہے کہ اگر جانماز اتنی نرم ہو کہ جس پر سجدہ کرتے وقت پیشانی کسی ایک سطح پر نہ ٹھہرے؛ بلکہ دبتی رہے، تو ایسی جانماز پر سجدہ صحیح نہیں ہوگا کذا فی کتب الفقہ والفتاوی، اگر کبھی شک ہو، تو از خود کوئی حکم لگانے کے بجائے مقامی کسی معتبر مفتی صاحب سے صف اور جانماز کا معاینہ کروالینا چاہیے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات