عبادات - صلاة (نماز)

pakistan

سوال # 175603

عرض گزار ہوں کہ مغرب کی اذان اور جماعت کے درمیاں کتنا وقفہ کیا جاسکتاہے؟غرض اس وقفہ کی یہ ہوکہ وضو کرنے والے نمازی تکبیراولیٰ میں شام ہوسکیں احسن الفتاوی جو وقفہ اذان مغرب کے بعد مذکور ہے کیا وہ صرف رمضان شریف کیلئے ہے یا پورے سا ل کیلئے ہے؟

Published on: Jan 21, 2020

جواب # 175603

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:337-279/sd=5/1441



مغرب کی نماز میں تعجیل مستحب ہے، اذان کے بعد جلد از جلد نماز شروع کردینی چاہیے ، اذان اور نماز کے درمیان اتنی تاخیر کرنا کہ جس میں دو رکعت پڑھی جاسکے، مکروہ تنزیہی ہے اور نمازیوں کو چاہیے کہ وہ مغرب کی اذان سے پہلے وضوء وغیرہ کرکے مسجد پہنچنے کا اہتمام رکھیں، تاکہ تکبیر اولی مل جائے ۔



قال الحصکفی: و تعجیل مغرب مطلقا و تاخیرہ قدر رکعتین یکرہ تنزیہا۔( الدر المختار مع رد المحتار: ۲۹/۲، کتاب الصلاة، ط: زکریا، دیوبند) احسن الفتاوی کا حوالہ یا متعلقہ صفحہ منسلک کرکے سوال کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات