عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 171511

اگر مسجد میں فرض نماز نکل جائے تو کیا گھر میں مرد اور خواتین ساتھ میں جماعت کر سکتے ہیں کیا؟ اگر کر سکتے ہیں تو صف کی ترتیب کیا ہوگی؟ کیا خالی بیگم کے ساتھ فرض نماز کی جماعت کر سکتے ہیں؟ کر سکتے ہیں تو صف کی ترتیب کیا ہوگی؟

Published on: Jul 7, 2019

جواب # 171511

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1211-131T/L=10/1440



اگر مسجد کی جماعت نکل جائے تو گھر میں محرم خواتین یابیوی کے ساتھ جماعت کی جاسکتی ہے ؛البتہ عورتیں پیچھے کھڑی ہوں گی ،اسی طرح اگر تنہا بیوی ہو تو اس کے ساتھ بھی جماعت کی جاسکتی ہے ؛لیکن بیوی تنہا ہونے کے باوجود پیچھے کھڑی ہوگی ،شوہر کے برابر میں کھڑی نہ ہوگی ،ورنہ شوہر کی نماز فاسد ہوجائے گی ۔



 (ولنا) ما روی عبد الرحمن بن أبی بکر عن أبیہ - رضی اللہ عنہما - أن رسول اللہ - صلی اللہ علیہ وسلم - خرج من بیتہ لیصلح بین الأنصار لتشاجر بینہم فرجع وقد صلی فی المسجد بجماعة فدخل رسول اللہ - صلی اللہ علیہ وسلم - فی منزل بعض أہلہ فجمع أہلہ فصلی بہم جماعة.( بدائع الصنائع ۳۷۹/۱زکریا) وإذا کان مع الإمام امرأة أقامہا خلفہ؛ لأن محاذاتہا مفسدة۔(بدائع الصنائع ۳۹۲/۱زکریا) قال: إمرأة إذا صلت مع زوجہا فی البیت، إن کان قدمیہا بحذاء قدم الزوج، لا تجوز صلا تہما بالجماعة، وإن کان قدمہا خلف قدم الزوج، إلا أنہا طویلة تقع رأس المرأة فی السجود قبل رأس الزوج جازت صلا تہما؛ لأن العبرة للقدم.(ردالمحتار / باب الإمامة ۳۱۵/۲زکریا)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات