عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 171473

صبح صادق کے بعد اذان سے پہلے تہجد کا حکم؟ اگر پڑھیں تو گناہوگا یا نہیں؟ اور کبیرہ گناہ ہوگا یا صغیرہ یا مکروہ تحریمی یا تنزیہی ؟ وضاحت فرمائیں۔

Published on: Jul 22, 2019

جواب # 171473

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1244-1079/L=11/1440



صبح صادق کے بعد اذان سے پہلے یا اذان کے بعد تہجد یا کوئی اور نفل پڑھنا جائز نہیں، مکروہِ تحریمی ہے،اگر کبھی غلطی سے یا عدم واقفیت کی بناپر پڑھ لی تو گناہ نہ ہوگا؛البتہ اس کی عادت بنالینا گناہ کا باعث ہوگا۔ (وکرہ نفل) قصدا ولو تحیة مسجد... (بعد صلاة فجر و) صلاة (عصر)... وکذا) الحکم من کراہة نفل وواجب لغیرہ لا فرض وواجب لعینہ (بعد طلوع فجر سوی سنتہ) لشغل الوقت بہ (الدرالمختار) وفی ردالمحتار: (قولہ: وکرہ نفل إلخ) شروع فی النوع الثانی من نوعی الأوقات المکروہة وفیما یکرہ فیہا، والکراہة ہنا تحریمیة أیضا کما صرح بہ فی الحلیة ولذا عبر فی الخانیة والخلاصة بعدم الجواز، والمراد عدم الحل لا عدم الصحة کما لا یخفی.( رد المحتار علی الدر المختار:2/ 36 ،ط:زکریا دیوبند)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات