عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 171355

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ اکثر جوان طبقہ مسجد میں ٹی شٹ پہن کے آتے ہیں جس میں اخبار جیسے پرینٹ ہوتے ہیں ان صورت میں اگر پیچھے کی صف والے مقتدیوں کی نظر اس پہ پڑتی ہے اور مقتدی کبھی تو اس پڑ بھی اور سمجھ بہی لیتے ہے کہ وہ کیا لکھا ہے اس کے معنی و مفہوم کیا ہے۔۲) اور اس طرح مسجدوں میں بھی طرح طرح کی تختی لٹکی رہتی ہے جس پہ یا کوئی آیت لکھی ہوتی ہے۔ان صورتوں میں جب کہ نماز میں اس پڑ کر اس کا مفہوم سمجھ لیا جاتا ہے اس سے نماز پہ کیا حکم لگے گا؟

Published on: Jul 29, 2019

جواب # 171355

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1263-1107/L=11/1440



ان تمام صورتوں میں نماز فاسد نہ ہوگی ؛تاہم اس سے حتی الوسع بچنا چاہیے ۔



وفی الجامع الصغیر الحسامی لو نظر فی کتاب من الفقہ فی صلاتہ وفہم لا تفسد صلاتہ بالإجماع. کذا فی التتارخانیة إذا کان المکتوب علی المحراب غیر القرآن فنظر المصلی إلی ذلک وتأمل وفہم فعلی قول أبی یوسف - رحمہ اللہ تعالی - لا تفسد وبہ أخذ مشایخنا وعلی قیاس قول محمد - رحمہ اللہ تعالی - تفسد. کذا فی الذخیرة والصحیح أنہا لا تفسد صلاتہ بالإجماع. کذا فی الہدایة ولا فرق بین المستفہم وغیرہ علی الصحیح. کذا فی التبیین.(الفتاوی الہندیة 1/ 101)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات