عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 170837

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں موجودہ زمانے میں امام کی تنخواہ کتنی ہونی چاہیے جس طرح کے آج کل اخراجات ہیں اس اعتبار سے کمیٹی کے ذمے کتنے اخراجات ہونا چاہیے کیا مقتدی حضرات پر بھی ان چیزوں کی ذمہ داری ہے شریعت مطہرہ کی روشنی میں جواب مرحمت فرمائیں۔

Published on: Jul 11, 2019

جواب # 170837

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:872-762/sd=11/1440



امام کی تنخواہ اتنی ہونی چاہیے کہ جس سے اُس کی ضروریات تنگی اور محتاجگی کے بغیر پوری ہوجائیں اور اس کو یکسوئی حاصل رہے، علاقے کی نوعیت کے اعتبار سے اس کی مقدار مختلف ہوسکتی ہے اورتنخواہ کے نظم کی ذمہ داری جس طرح مسجد کمیٹی کی ہے، اسی طرح مصلیوں کی بھی ذمہ داری ہے کہ تنخواہ کے اخراجات کے لیے حسب وسعت تعاون کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات