عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 17064



مولوی
بہاوٴ الحق قاسمی دیوبندی امرتسری لکھتے ہیں: حضرت (اشرف علی) تھانوی فرمایا کرتے
تھے [اگر مجھ کو مولانا احمد رضا خاں صاحب بریلوی کے پیچھے نماز پڑھنے کا موقع مل
جاتا تو میں (نماز) پڑھ لیتا]۔ (اسوہٴ اکابر ص:
۱۵)



اب
کیا بریلویوں کے پیچھے نماز پڑھ سکتے ہیں؟



Published on: Nov 16, 2009

جواب # 17064

بسم الله الرحمن الرحيم



فتوی(ب):1774=0000-11/1430



 



اگر
بریلوی مشرکانہ عقیدہ نہیں رکھتا ہے محض بدعتی ہے، تو اس کے پیچھے نماز صحیح ہوجاتی
ہے۔ البتہ نماز مکروہ تحریمی ہوتی ہے۔ اس لیے اگر کہیں سفر میں اپنے لوگوں کی مسجد
نہیں ہے تو بدعتی کی مسجد میں نماز باجماعت بدعتی کے پیچھے پڑھ سکتے ہیں۔ جماعت کا
ثواب مل جائے گا۔




واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات