عبادات - صلاة (نماز)

Pakistan

سوال # 168305

کیا شدید سردی کے باعث تیمم کرسکتے ہیں اور اس سے نماز ادا کر سکتے ہیں؟ تیمم کرنے کی شرائط کیا ہیں؟ موجودہ دور کے اعتبار سے اور اگر شدید سردی کی وجہ تیمم کیا لیکن اس سے نماز ادا نہیں کی تلاوتِ قرآن کریم کی وہ بھی زبانی تو کیا پھر بھی کوئی حرج ھوا مھربانی کرکے تیمم کے بارے میں واضح طور پر مکمل معلومات بیان کردیں؟
جزاکم اللہ خیرا کثیرا کثیرا کثیرا

Published on: Feb 10, 2019

جواب # 168305

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 553-519/M=06/1440



اگر غسل کرنا واجب ہے اور سردی اتنی سخت ہے کہ نہانے سے مرجانے یا بیمار ہو جانے کا خوف ہے اور لحاف وغیرہ کوئی ایسی چیز بھی نہیں کہ نہا کر اس میں گرم ہو جائے تو ایسی مجبوری میں تیمم کرکے نماز ادا کرنا درست ہے بشرطیکہ گرم پانی نہ مل سکتا ہو، اگر گرم پانی دستیاب ہے اور اس سے نہانا نقصان دہ نہیں تو گرم پانی سے غسل کرنا واجب ہے۔ تیمم کی اجازت اس وقت ہوتی ہے جب کہ پانی ایک میل کے اندر موجود نہ ہو یا موجود ہو لیکن ایسا عذر ہو کہ پانی کے استعمال سے جان کی ہلاکت یا مرض کے بڑھ جانے کا اندیشہ ہو۔ من عجز عن استعمال الماء ․․․․․․․ لبعدہ میلاً ․․․․․ أوبرد یہلک الجنب أو یمرضہ ولوفی المصر الخ (درمختار) اگر کسی نے سخت سردی کی وجہ سے تیمم کیا اور اس سے نماز نہیں پڑھی، صرف قرآن کی زبانی تلاوت کی تو اس میں حرج نہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات