عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 168232

حضرت نماز میں دل نہیں لگتا اور وسوسے بہت آتے ہیں اور نماز میں شک میں پڑجاتا ہوں کہ شاید نماز یہ کمی رہ گئی وہ کمی رہ گئی وغیرہ وغیرہ۔ آپ سے گزارش ہے کہ کچھ حل بتائیں۔ میں آپ کا بہت ہی شکر گزار رہوں گا۔

Published on: Jan 17, 2019

جواب # 168232

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 502-446/M=05/1440



نماز میں وسوسہ آئے تو اپنے خیال کو فوراً نماز کی طرف پھیر لیا کریں وسوسہ کو اپنے دل میں نہ جمائیں، نماز میں یکسوئی اور خشوع پیدا کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ آپ جس رکن کو ادا کریں، مکمل دھیان اسی کی طرف رکھیں مثلاً قرأت کر رہے ہیں تو یہ سوچیں کہ ہم قرأت کر رہے ہیں، رکوع میں جائیں تو رکوع اور تسبیحات کا استحضار کریں الغرض جو عمل کریں اس کی طرف پوری توجہ رکھیں، توجہ بٹے تو فوراً توجہ اُسی رکن کی طرف لوٹائیں، ہر نماز کو اسی شان کے ساتھ ادا کرنے کی سعی و کوشش کرتے رہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات