عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 147070

میں نے ایک حدیث پڑھی ہے جس کا مفہوم یہ تھا کہ اگر دو لوگ الگ الگ نماز پڑھیں اس سے بہتر یہ ہے کہ وہ دونوں جماعت سے نماز پڑھیں۔ کل رات میری عشاء کی نماز چھوٹ گئی تھی میں نے ایک ساتھی سے کہا کہ جماعت سے نماز پڑھ لیتے ہیں تو انہوں نے کہا کہ کسی مفتی نے مسجد میں اپنی جماعت کرنے سے متعلق مکروہ بتایا ہے۔
برائے مہربانی بتائیں کہ کب کب ہم جماعت سے نماز پڑھ سکتے ہیں؟

Published on: Dec 19, 2016

جواب # 147070

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 296-268/B=3/1438



 



اگر کبھی جماعت نکل گئی تو کسی کو لے کر دوبارہ جماعت کرلینا بہتر ہے تاکہ جماعت کا ثواب مل جائے البتہ دوسری جماعت کے لیے مسجد سے باہر حصہ میں امام صاحب کا حجرہ ہو یا اور کوئی جگہ ہو وہاں جماعت ثانیہ کی جائے، اسی مسجد میں جہاں نماز باجماعت ہو چکی ہے جماعت ثانیہ کرنا احناف کے یہاں مکروہ ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات