عبادات - صلاة (نماز)

Pakistan

سوال # 147029

محترم مفتی صاحب یہ فرمائیے کہ ایسی مسجد اور امام کے پیچھے جو اذان اور اقامت صلات سے پہلے درود و سلام پڑھے کیا نماز پڑھنا جائز ھے ؟کیا ایسی نماز بارگاہ الہ میں قبول ہو جائیگی؟

Published on: Jan 8, 2017

جواب # 147029

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 324-325/L=4/1438



 



اذان واقامت سے پہلے درود سلام پڑھنا ثابت نہیں، بدعت ہے۔ قال علیہ السلام: من أحدث في أمرنا ہذا ما لیس منہ فہو رد، جوامام اذان واقامت سے پہلے صلاة وسلام پڑھتا ہو وہ بدعتی ہے اگر ایسے امام کے عقائد شرکیہ نہ ہوں تو اس کی اقتداء میں نماز کراہت تحریمی کے ساتھ درست ہوجاتی ہے، اگر قریب میں کوئی مسجد ہو جس کا امام متبع سنت ہو تو اس کی ہی اقتداء میں نماز ادا کی جائے بمجبوری اگر کبھی مذکور فی السوال امام کی اقتداء میں نماز ادا کرلی جائے تو گنجائش ہوگی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات