معاشرت - اخلاق و آداب

Pakistan

سوال # 671

طلبہ کو مارنے پیٹنے کے متعلق شرعی حدود کیا ہیں؟


والسلام

Published on: Jun 12, 2007

جواب # 671

بسم الله الرحمن الرحيم

(فتوى: 244/ل=244/ل)


 


بچوں کے اولیاء کی اجازت سے بضرورت تعلیم مارنا، سزا دینا شرعا درست ہے مگر بچوں کے تحمل سے زائد نہیں، ایک دفعہ میں تین ضربات سے زیادہ نہ مارے، لکڑی وغیرہ سے نہ مارے۔ قال في الدرالمختار: وإن وجب ضرب ابن عشر علیھا بید لا بخشبة قولہ (بید) أي ولایجاوز الثلاث، وکذلک المعلم لیس لہ أن یجاوزھا قال علیہ السلام لمرداس المعلم *إیاک أن تضرب فوق الثلاث؛ فإنک إذا ضربت فوق الثلاث اقتص اللّٰہ منك* وظاہرہ أنہ لایضرب بالعصا في غیر الصلاة أیضا (الشامي ط زکریا: ج ۲ص۵)


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات