معاشرت - اخلاق و آداب

Pakistan

سوال # 59860

اگر محلے کی مسجد ہو اور وہاں حفاظ بھی موجود ہو جو قرآن پاک پڑھانے کی صلاحیت اور شعور بھی رکھتے ہوں اور وہ نماز تراویح بھی پڑھاتے ہوں تو ایسے میں غیر محلہ دار کا محلہ کی مسجد میں تراویح پڑھانا کیسا ہے اور مسجد میں حق کس کا بنتاہے؟ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں۔

Published on: Jun 23, 2015

جواب # 59860

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 598-563/Sn=9/1436-U

صورت مسئولہ میں اگر محلے کی مسجد کا مستقل امام حافظ قرآن ہے اور وہ تراویح میں قرآن سنانا بھی چاہتا ہے، تو اسے یہ موضع دینا چاہیے، اگر مستقل
ا مام حافظ نہیں ہے یا تراویح میں قرآن سنانے پر آمادہ نہیں ہے تو محلے کے جو بچے حافظ قرآن ہیں، اگر وہ قرآن سنانا چاہیں نیز ان کی چال چلن بھی ٹھیک ہے تو انھیں تراویح کا موقع دینا چاہیے محلے میں لائق حافظ ہوتے ہوئے بلا کسی معقول وجہ کے دوسری جگہ سے تراویح کے لیے حفاظ بلانا مناسب نہیں ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات