معاشرت - اخلاق و آداب

INDIA

سوال # 160312

آج کل بیت الخلاء وحمام ملحق ہوتے ہیں۔ دروازے میں داخل ہوتے ہی غسل خانہ ہے۔ پھر بیت الخلاء ایک بالشت اونچائی پر ہے۔
(۱) کیا اس چبوترہ پر سیدھے پیر سے چڑھیں؟
(۲) بیت الخلاء وحمام کے بیچ کوئی دیوار نہیں۔ حمام میں وضو کی جگہ ہے وہاں وضو کی دعا پڑھنا کیسا ہے؟ بیت الخلاء سامنے ہونے کی و جہ سے کراہیت ہوتی ہے۔
(۳) بیت الخلاء میں داخلہ کی دعا کب پڑہیں؟ دروازے میں داخل ہوتے وقت یا چبوترہ پر چڑھتے وقت؟ اس دروازہ میں کس پیر سے داخل ہوں؟

Published on: Apr 18, 2018

جواب # 160312

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:795-738/M=7/1439



(۱) اس چبوترہ پر جہاں سے بیت الخلاء کی اصل اونچائی شروع ہوتی ہے بایاں پیر سے چڑھیں۔



(۲) اس صورت میں جہاں حمام میں وضو کی جگہ ہے اگر وہاں تک بیت الخلاء کی بدبو نہیں آتی اور حمام بھی صاف ستھرا ہے تو وضو کی دعائیں ہلکی آواز میں پڑھ سکتے ہیں۔



(۳) دروازے میں داخل ہونے سے پہلے یا داخل ہوتے ہوئے دعا پڑھ لیں اور بایاں پیر سے داخل ہوں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات