معاشرت - اخلاق و آداب

india

سوال # 156699

(۱) والد صاحب شراب وغیرہ پی کر آتے ہیں اور نشہ کرنے کے لیے پیسے مانگتے ہیں اور پیسے نہ دینے پر والدہ کو طلاق کی دھمکی دیتے ہیں، تو کیا ایسے میں طلاق ہو جائے گی؟
(۲) والد صاحب شراب کے نشہ میں آکر گھر میں مار پیٹ کرتے ہیں اور تماشا کرتے ہیں، ایسے میں اگر غصے میں آکر بیٹے نے والد سے مار پیٹ کرلی، تو بیٹے پر کیا حکم لگے گا؟

Published on: Dec 23, 2017

جواب # 156699

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:296-344/sn=4/1439



(۱) اگر صرف طلاق کی دھمکی ہی دیتے ہیں، انشائے طلاق کے الفاظ (مثلاً میں نے طلاق دیدی یا تجھے طلاق) استعمال نہیں کرتے تو صورتِ مسئولہ میں کوئی طلاق واقع نہ ہوگی۔



(۲) بیٹے کے لیے اس صورت میں بھی ”باپ“ کو مارنا جائز نہیں ہے، اگر بیٹے نے ایسی حرکت کرلی ہے تو اسے چاہیے کہ والد صاحب سے معافی مانگ لے اور انھیں خوش کرلے نیز اللہ تعالیٰ کے سامنے توبہ واستغفار بھی کرلے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات