معاشرت - اخلاق و آداب

India

سوال # 149227

نہار منہ صبح سویرے پانی پینا کیسا ہے؟ کیا حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے سے منع کیا ہے؟ کیا یہ خلاف سنت ہے؟ اس لیے کہ مجھے وہاٹس اَیپ پر مجھے یہ میسج آیا: ترمذی شریف کی روایت ہے کہ صبح سویرے نہار منہ پانی نہیں پینا چاہئے اور اسے حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے منع فرمایا ہے، بعض لوگ یہ کہتے ہیں کہ یہ غلط بات ہے بالکل پی سکتے ہیں پانی صبح سویرے، اس میں کوئی حرج نہیں ، اور اس میں بہت سارے فوائد ہیں۔
آپ سے گذارش ہے کہ مجھے اس معاملہ میں تسلی بخش جواب دیں ۔ جزاک اللہ

Published on: Mar 9, 2017

جواب # 149227

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 519-432/Sd=6/1438



صبح سویرے پانی پینے کی ممانعت پر تلاش بسیار کے بعد بھی ہم کو کوئی حدیث نہیں ملی، آپ نے ترمذی شریف کے حوالے سے جو حدیث پڑھی ہے، اس کے عربی الفاظ حوالہ کے ساتھ لکھیں۔



----------------------------------



نوٹ: بہشتی زیور میں لکھا ہے سوتے اٹھ کر فوراً پانی نہ پیو، اسی طرح نہار منھ نہ پینا چاہیے۔ (بہشتی زیور: ج۹ص۸)



ہوسکتا ہے کہ طبی مضرت ہو۔(د)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات