Pakistan

سوال # 69026

زکوة اور قربانی کے نصاب میں فرق تفصیل سے بتائیں۔

Published on: Sep 8, 2016

جواب # 69026

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 1175-1106/SN=12/1437

وجوبِ زکوة کے لیے ”مال“ کا نامی (خواہ خلقةً نامی ہو جیسے سونا، چاندی یا آدمی کے عمل سے نامی ہو جیسے مالِ تجارت) ہونا نیز اس پر سال گذرنا شرط ہے، جب کہ وجوبِ قربانی کے لیے نہ تو مال کا نامی ہونا شرط ہے یا نہ ہی اس پر سال گذرنا، اگر کسی کے پاس حوائجِ اصلیہ سے زائد زمین، جائداد یا اثاثہ ہو تب بھی شرعاً قربانی واجب ہوجاتی ہے بہ شرطے کہ قدرِ نصاب کو پہنچ جائے حالانکہ اس کی وجہ سے زکوة لازم نہیں ہوتی۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات