Pakistan

سوال # 155559

حضرت، میرے پاس ایک کرن بکرا ہے (نہ وہ نَر ہے نہ وہ مادہ ہے) اس کی قربانی یا عقیقہ کرنا جائز ہے؟
براہ کرم جلد از جلد بتائیں تاکہ میں اس کو عقیقہ کے لیے ذبح کرسکوں۔ جزاک اللہ

Published on: Nov 1, 2017

جواب # 155559

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:94-57/N=2/1439



جو جانور خنثی ہو، یعنی: اس میں نر ومادہ دونوں کی جنسی علامات ہوں یا دونوں میں سے کسی کی کوئی جنسی علامت نہ ہو اور پیشاب کے لیے صرف سوراخ ہو تو اس کی قربانی یا عقیقہ شرعاً درست نہیں، جانور کا خنثی ہونا ایسا عیب ہے جو قربانی یا عقیقہ کی صحت میں مانع ہوتاہے ؛ اس لیے آپ عقیقہ میں کوئی ایسا جانور ذبح کریں جس میں اس طرح کا کوئی عیب نہ ہو(در مختار وشامی،۹: ۴۷۰، مطبوعہ: مکتبہ زکریا دیوبند،الدر المنتقی مع المجمع، ۴:۱۷۲مطبوعہ: دار الکتب العلمیہ بیروت لبنان)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات