india

سوال # 131086

(۱) کیا مشرک کا ذبیحہ حلال ہے؟
(۲) کیا بریلوی عالم کے ہاتھوں قربانی کا جانور ذبح کیاجائے تو قربانی ہوجائے گی؟

Published on: Nov 6, 2016

جواب # 131086

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 1525-1515/L=2/1438

(۱) مشرک کا ذبیحہ حلال نہیں۔ وفي أحکام القرآن: وقد علمنا أن المشرکین وإن سموا علی ذبائحہم لم توکل (أحکام القرآن للجصاص: ۴/۱۷۱، ط: دار احیاء اترات العربی)

(۲) قربانی ہو جائے گی، تاہم احتیاط کرنا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات