متفرقات - دیگر

india

سوال # 162311

میر ا حمل جو کہ سات ہفتے اور پانچ دن کا تھا، ساقط ہوگیا ، اس لیے میں احتیاط و تدابیر کے بارے میں جاننا چاہوں گی جو از روئے شرع ضروری ہے۔ میرے رشتہ دار مختلف باتیں کرتے ہیں جیسے کہ چالیس دن ہمبستری نہیں کرسکتے اور مجھے کچھ آرام کرنے کی ضرورت ہے ، چونکہ بچہ دانی کمزور ہے، وغیرہ، براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔

Published on: Jul 3, 2018

جواب # 162311

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1226-1070/L=10/1439



صورتِ مسئولہ میں اگر خون دس دن تک یا اس سے پہلے بند ہوجاتا ہے اور ایک نماز کا وقت گذرجاتا ہے تو اس کے بعدشرعاً بیوی سے مجامعت کی اجازت ہوجاتی ہے ،اسی طرح اگر خون دس دن کے بعد تک جاری رہتا ہے تو ایام عادت کے بعد مجامعت کی گنجائش ہوجاتی ہے ؛البتہ اگر اس وقت جماع کرنا مضرِ صحت ہو تو جماع سے احتیاط کرنا ضروری ہوگا،بہتر ہے کہ اس سلسلے میں کسی مسلمان ڈاکٹر یا حکیم سے بھی مشورہ کرلیا جائے۔ یحرم علی الزوج وطأ زوجتہ مع بقاء النکاح فیما إذا کانت لا تحتملہ لصغر أو مرض أو سمنة․․․ فعلم من ہذا کلہ أنہ لا یحل لہ وطوٴہا بما یوٴدي إلی إضرارہا (شامي: ۳/۲۰۴، کتاب النکاح، ط: سعید)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات