متفرقات - دیگر

India

سوال # 151924

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ کسی نے اپنا بچہ کسی دوسرے کو ہبہ کرنا چاہتے ہیں تو کیا اس کے لے ہبہ کرنا درست ہے اور کیا ہبہ کرنے کے بعد اس بچہ کو واپس لے سکتے ہیں یا نہیں؟

Published on: Jun 15, 2017

جواب # 151924

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 1010-978/N=9/1438



(۱، ۲): اپنا بچہ کسی دوسرے کو ہبہ نہیں کرسکتے؛ کیوں کہ ہبہ ان اشیا یا جانوروں کا ہوتا ہے جو کسی کی ملک ہوں اور بچے باپ کی ملک (غلام، باندی)نہیں ہوتے؛ بل کہ وہ آزاد ہوتے ہیں؛ البتہ کسی نے اپنا کوئی بچہ دوسرے کو پرورش کے لیے دیا تو اس میں کچھ حرج نہیں؛ لیکن پرورش کرنے والا بچے کا مالک نہ ہوگا، اگر پرورش کرنے والا کسی مصلحت کے تحت بچے کو واپس لے کر دوبارہ اپنے پاس رکھنا چاہے تو پرورش کرنے والا اس میں رکاوٹ نہیں ڈال سکتا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات