معاملات - دیگر معاملات

India

سوال # 154690

سوال؛ایک برادری کے لوگوں نے کمیٹی بنائی جس میں یہ طے ہوا کہ برادری کے لوگ ایک جگہ پیسے جمع کریں گے اور برادری میں جس کو ضرورت ہو اسے قرض دیا جائے گا اور وہ قرض کی رقم ادا کرنے کے بعداپنی خوشی سے کمیٹی میں کچھ روپئے کی رسید بنائے گا کیا ایسا کرنا درست ہوگا کہ نہیں ؟کہیں یہ سود میں تو داخل نہ ہوگا؟
جواب مرحمت فرمائیں۔

Published on: Oct 22, 2017

جواب # 154690

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1452-1495/H=2/1439



اگر اس طرح طے کردیں کہ رقم کی ادائیگی پر تو کچھ نہ دے البتہ اگر چاہے تو ہفتہ دو ہفتہ کے بعد بخوشی جو دل چاہے کمیٹی میں کچھ رقم دے کر رسید بنوالے اور اس رسید بنوانے میں کسی کی طرف سے کسی بھی قسم کا کوئی دباوٴ بالکل نہ ہو تو گنجائش ہے اور یہ شکل سودی نہ ہوگی اور اگر کسی قسم کا دباوٴ رسید بنوانے میں ہوا تو سود میں داخل ہوگا اور بہتر بہرحال یہی ہے کہ رسید بنوانے کا معاملہ ختم ہی کردیا جائے تاکہ شبہة الربا کی بھی نوبت نہ آئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات