معاملات - دیگر معاملات

Pakistan

سوال # 148472

ایک مکان ہے اگر اسے نقد قیمت پر لیا جائے تو اس کی قیمت ۱۵/ لاکھ روپیہ ہوگی، اور اگر قسط پر لیا جائے تو ۲۰/ لاکھ تک قیمت مل سکتی ہے، تو کیا یہ قسط وار طریقے پر اس کا لین دین جائز ہوگا یا حرام؟

Published on: Feb 16, 2017

جواب # 148472

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 570-549/M=5/1438



نقد کم قیمت پر اور ادھار زیادہ قیمت پر خرید وفروخت جائز ہے بشرطیکہ مجلس عقد میں ایک قیمت متعین ہوجائے اور معاملہ مجہول نہ رہے، صورت مسئولہ میں ۱۵/ لاکھ کا مکان قسطوں پر ۲۰/ لاکھ روپئے میں لین دین کیا جاسکتا ہے یہ ناجائز نہیں ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات