معاشرت - نکاح

India

سوال # 161664

کیا فرماتے ہیں مفتیان دین شرع متین اس بارے میں کہ نکاح کے منعقد ہونے کے لیے دو گواہوں کا ہونا شرط ہے ،تو سوال یہ ہے کہ وہ دونوں گواہ کس کی طرف سے ہونے چاہئے لڑکی کی طرف سے یا لڑکے کی طرف سے یا دونوں میں سے ہر ایک کی طرف سے ایک ایک؟

Published on: Jun 9, 2018

جواب # 161664

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:967-856/D=9/1439



نکاح کے صحیح ہونے کے لیے محض دو گواہ ہونا شرط ہے خواہ وہ دونوں لڑکے کی طرف سے ہوں یا دونوں لڑکی کی طرف سے، یا دونوں طرف سے ایک ایک، یا دونوں ہی غیرجانب دار ہوں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات