معاشرت - نکاح

Oman

سوال # 161381

سوال: میں نے ایک سال قبل گھر والوں سے چھپ کر نکاح کیا، مگر اب وہ میرے اس رشتے پر راضی ہیں، مجھے ان کے سامنے پھر نکاح کرنا ہے اپنی بیوی سے ، کیا ایسا جائز ہے ؟ اور حق مہر کونسا ادا کرنا چاہئے ، پہلے نکاح والا یا دوسرے والا،؟ کیا فرماتے ہیں علماء کرام؟

Published on: Jun 7, 2018

جواب # 161381

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:924-801/D=9/1439



اگر آپ دونوں نے پہلے شرعی طور پر دو مسلمان گواہوں کے سامنے نکاح کرلیا تھا تو وہ نکاح لازم ہوگیا اب دوبارہ نکاح کرنے کی ضرورت نہیں ہے لیکن اکر کسی مصلحت کے تحت دوبارہ نکاح کرنا چاہتے ہیں تو کرلیں۔ اور لڑکی کے سامنے اگر اس بات کی وضاحت ہوجائے کہ دوبارہ نکاح یونہی کررہے ہیں تو بس پہلا ہی مہر واجب ہوگا، دوسرا مہر لازم نہ ہوگا۔ یا آپ دو آدمیوں کے سامنے اس کی وضاحت کردیں کہ ہمارا نکاح تو ہوچکا دوبارہ یونہی بطور ”ہزل“ کے ہے حقیقةً نکاح نہیں ہے تو پھر دوسرے نکاح میں ذکر کردہ مہر دینا لازم نہ ہوگا۔



قال الشامي: ثم ذکر إن قاضیخاں أفتی بأنہ لا یجب بالعقد الثاني شيء ما لم یقصد بہ الزیادة في المہر․ (الدر مع الرد: ۴/۳۴۷)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات