معاشرت - نکاح

India

سوال # 161119

بیوی حمل سے ہے اور اب اگلے 3 سے 4 ماہ تک ملاقات اور جنسی تسکین حاصل کرنے کی کوئی صورت نہیں ہے ۔ اور میرے لئے صبر کر پانا بہت مشکل ہے ۔ شہوت کا زیادہ غلبہ ہونے پر گندی فلم دیکھنے میں لگ جانے خطراہ ہے ۔ تو کیا اس صورت میں مشت زنی کے ذریعہ شہوت کنٹرول کرنا درست ہے؟

Published on: May 27, 2018

جواب # 161119

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:872-760/D=9/1439



حمل کی حالت میں ہمستری کرنا شرعی طور پر منع نہیں ہے، لہٰذا طبی طور پر اگر مضر نہ ہو تو ہمبستری کرکے تسکین حاصل کرلیں۔ اور جسم کے دوسرے حصے سے بھی لطف اندوزی کرسکتے ہیں، گندی فلمیں دیکھنا بڑا گناہ ہے اور مشت زنی بھی گناہ کے ساتھ نقصان دہ بھی ہے۔ لیکن شہوت کا انتہائی غلبہ ہوگیا ہو اور حرام میں پڑنے کا ڈر ہو تو انتہائی مجبوری کی حالت میں مشت زنی سے تسکین کرسکتے ہیں تاکہ دوسرے حرام مثلاً زنا وغیرہ میں پڑنے سے بچ سکیں لیکن اس کی عادت نہ ڈالیں اور مصنوعی طریقے سے شہوت کو سوال نہ کریں۔



--------------



صورت مسئولہ میں اگر بیوی کے ہاتھ مشت زنی کا طریقہ اختیار کیا جائے تو اس کی گنجائش ہوگی اس لیے ضرورتاً یہ ترکیب اختیار کی جاسکتی ہے خود اپنے ہاتھ سے منی کا خروج نہ کیا جائے۔ (ل)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات