متفرقات - اسلامی نام

Pakistan

سوال # 152039

اگر کسی نے اپنے بچے کا نام محمد رکھا اور گھر میں لوگوں نے پیار میں اس کا نام بیگاڑ کر مومی موم پکس مومدو وغیرہ سے پکارنا شروع کر دیا تو کیا حکم ہوگا؟ کیا وہ گناہگار ہوں گے یا نہیں؟ نیز ایسا کرنا کیساہے ؟

Published on: Jul 12, 2017

جواب # 152039

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 1299-1254/L=10/1438



”محمد“نام کو بگاڑ کر مومی موم پکس مومدووغیرہ کہ کر پکارنے میں قابلِ احترام نام کو بگاڑنا ہوا جودرست نہیں؛اس لیے ”محمد“نام کو اس کے صحیح تلفظ کے ساتھ پکارنا چاہیے،مذکورہ بالا طریقے پر پکارنا درست نہیں۔ قال أبو اللیث: لا أحب للعجم أن یسموا عبد الرحمن وعبد الرحیم لأنہ لا یعرفون تفسیرہ ویسمونہ بالتصغیر وہذا اشتہر فی زماننا (شامي: ۹/۵۹۸)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات