عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

India

سوال # 157480

حضرت مفتی صاحب! اگر کسی شخص کے کوئی عمل پر اس سے یوں کہا جائے کہ ”آپ میں ایمانی غیرت نہیں ہے“ جواب میں وہ شخص کہے کہ نعوذ باللہ! ”میرے میں ایمانی غیرت نہیں ہے“ تو اس صورت میں اسے تجدید ایمان اور تجدید نکاح کرنا چاہئے؟

Published on: Jan 15, 2018

جواب # 157480

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:385-326/D=4/1439



جواب میں اس شخص کا کہنا کہ نعوذ باللہ ”میرے میں ایمانی غیرت نہیں“ سے کسی قسم کا کفر لازم نہیں آیا کہ تجدید ایمان اور تجدید نکاح کا حکم ہو۔



قائل تو خود ہی ایمانی غیرت نہ ہونے سے اللہ کی پناہ چاہ رہا ہے جو قوی قرینہ ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات