عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

Pakistan

سوال # 157286

مفتی صاحب، ہم قبرستان میں قبر والوں کو سلام کرتے ہیں، کیا یہ قبر والے ہمارے سلام کی آواز سنتے ہیں اور کیا جواب بھی دیتے ہیں حضرت محمد صل اللہ علیہ وسلم کے روضہ مبارک پر جو دل میں سلام کیا جائے ؟ کیا آپ ص سنتے ہیں یا نہیں؟ اور اگر اونچی آواز سے پڑھا جائے تو بھی سنتے ہیں؟

Published on: Jan 20, 2018

جواب # 157286

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:297-331/M=4/1439



(۱) مردے قبر میں سنتے ہیں یا نہیں یہ مسئلہ عہد صحابہ سے مختلف فیہ چلا آرہا ہے، حضرت مفتی عزیز الرحمن صاحب عثمانی رحمہ اللہ نے لکھا ہے: موتی کے سماع کا مسئلہ مختلف فیہا ہے، ظاہر آیت قرآنیہ ”اِنَّکَ لاَ تُسْمِعُ المَوْتَی“ عدم سماع پر دال ہے، اور قبور پر جاکر سلام کرنا موافق حکم شریعت کے ہے، اگر سماع نہ ہو اور ادراک ہو تو اس میں کچھ مضائقہ نہیں ہے، (دیکھئے فتاوی دارالعلوم دیوبند ۱۸، اور دیکھئے فتاوی محمودیہ ج۳)



(۲) روضہٴ اقدس پر جو سلام پیش کیا جائے وہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم سنتے ہیں، اور وہاں باادب درمیانہ آواز سے سلام پیش کرنا چاہیے بہت تیز آواز سے چلاکر سلام کرنا بے ادبی ہے، اور جو سلام دور سے بھیجا جائے اسے فرشتے پہنچاتے ہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات