عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

India

سوال # 155515

مفتی صاحب! مثلاً زید کے دفتر میں کسی غیر مسلم نے اسے اس کے نئے گھر کی پوجا کے لیے دعوت دی کہ فلاں دن ”آپ کو مدعو کیا جاتا ہے“ (آپ سادَر آمنترت ہیں)، زید نے جوا ب میں پوچھا کہ کب لیا گھر؟ اور کچھ دوسری باتیں ہونے لگیں، (زید نے یہ نہیں کہا کہ میں آوٴں گا)۔ پھر دوبارہ اس غیر مسلم نے کہا کہ ”ٹھیک ہے کل چار بجے“ تو زید ہنس کر بوتل سے پانی پینے لگا۔ لیکن اسے شبہ ہے کہ اس نے سر ہلایا یا نہیں۔ تو اگر غلطی سے سر ہلا گیا ہو تو زید کے ایمان میں کوئی فرق آئے گا؟

Published on: Oct 18, 2017

جواب # 155515

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 154-133/H=1/1439



زید کی طرف منسوب کرکے جتنی باتیں لکھی ہیں اگر صرف اتنی ہی پیش آئی ہیں توایمان میں کچھ فرق نہیں آیا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات