عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

india

سوال # 146881

میں نے سنا ہے کہ قرآن میں لکھا ہے کہ قرب قیامت سورج مغرب سے طلوع ہوگا ۔کیا یہ بات اپنے اصل معنی میں سچ ہے ؟ یا اسکا مفہوم کچھ اور ہے ؟

Published on: Dec 28, 2016

جواب # 146881

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 211-189/N=3/1438



 



قرب قیامت میں سورج کا مشرق کے بجائے مغرب سے طلوع ہونا قرب قیامت کی علامات میں سے اور اسلام کے اہم ترین عقائد میں ہے ہے ، جس پر ایمان لانا واجب وضروری ہے۔ اور جب یہ نشانی ظاہر ہوگی تو توبہ کا دروازہ بند ہوجائے گا، متعدد احادیث میں اس نشانی کا ذکر آیا ہے اور تمام علمائے امت کا اس پر اجماع ہے ؛ البتہ قرآن کریم میں صراحتاً ذکر نہیں آیا؛ بلکہ ایک آیت کریمہ کی تفسیر میں جمہور مفسرین کرام نے ذکر فرمایا ہے۔ ونوٴمن بطلوع الشمس من مغربھا (عقیدة الطحاوي، ص ۳۱)، قال العلماء رحمہم اللہ تعالی: طلوع الشمس من مغربھا ثابت بالسنة الصحیحة والأخبار الصریحة بل وبالکتاب المنزل علی النبي المرسل قال تعالی: ﴿یوم یأتي بعض آیات ربک لا ینفع نفساً إیمانھا لم تکن آمنت من قبل أو کسبت في إیمانھا خیراً الآیة ﴾، قد أجمع المفسرون أو جمہورھم علی أنھا طلوع الشمس من مغربھا الخ(لوامع الأنوار البھیة، ۲: ۱۳۳)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات