معاملات - سود و انشورنس

India

سوال # 161235

اگر کسی شخص کو ایک جگہ یعنی اپنے آ بائی جگہ میں مکان ہے ، اب وہ دوسری جگہ یعنی شہر میں بہت ساری ضرورتوں کی وجہ سے زمین یا مکان خریدنا چاہتا ہے تو برابر رقم نہ ہونے کی وجہ سے وہ بینک سے لون نکال کر یہ کام کر سکتا ہے ؟ مہربانی کرکے جواب مرحمت فرمائیں۔

Published on: May 27, 2018

جواب # 161235

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:879-766/D=9/1439



بینک سے لون لینے کی صورت میں سود ادا کرنا ہوگا اور سود کا لینا جس طرح حرام ہے اسی طرح سود کا دینا بھی حرام ہے، لہٰذا لون لینے سے احتراز کریں جو کچھ اللہ تعالیٰ نے عطا فرمایا ہے اس پر قناعت کرتے ہوئے اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کریں۔ اور اپنے موجود ومحدود وسائل سے کام کریں ان شاء اللہ برکت ہوگی۔ سود سے بے برکتی اور نحوست پیدا ہوتی ہے، یَمْحَقُ اللَّہُ الرِّبَا وَیُرْبِی الصَّدَقٰتِ اللہ تعالیٰ سود کو گھٹاتے ہیں اور صدقات کو بڑھاتے ہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات