معاملات - سود و انشورنس

Pakistan

سوال # 156742

آج کل مختلف بینکوں کی طرف سے پروموشنل اسکیم چل رہی ہیں، مثلا اگر آپ کسی ہوٹل میں کھانا کھانے کے بعد بِل کی ادائیگی بینک کے اے ٹی ایم کارڈ سے کرتے ہیں تو آپ کو بِل میں ڈسکاؤنٹ دے دیا جاتا ہے جو کہ کیش میں ادائیگی کی صورت میں نہیں ملتا، کیا یہ ڈسکاونٹ لینا جائز ہے ؟

Published on: Dec 14, 2017

جواب # 156742

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:223-210/sd=3/1439



صورت مسئولہ میں اگر ڈسکاوٴنٹ ہوٹل وغیرہ کی طرف سے ملے ، تو اس کو لینے کی گنجائش ہے ؛ لیکن اگر بینک کی طرف سے ڈسکاوٴنٹ مل رہا ہے ، تو ایسی صورت میں بعض مفتیان کی رائے یہ ہے اس کا استعمال بھی جائز ہے ؛ البتہ بعض کے نزدیک اس میں سود کا شبہ پایا جارہا ہے ،بہرحال ! احتیاط نہ لینے ہی میں ہے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات