عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

Pakistan

سوال # 9806

میت کے لیے قل، برسی، چالیسوان، فاتحہ وغیرہ کروانے کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

Published on: Jan 15, 2009

جواب # 9806

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 2=9/ ب


 


اگر بلاتعیین یوم کے، جمع ہوکر ختم قرآن کریں، یا کلمہٴ طیبہ کا ورد ایصالِ ثواب کے لیے کریں تو یہ جائز ہے، لیکن قل، برسی، چالیسواں، فاتحہ وغیرہ کا موجودہ مروجہ طریقہ بدعت اور مکروہ ہے، شریعت میں اس کی کچھ اصل نہیں (تالیفات رشیدیہ:۱۴۳) في رد المحتار: وفي البزازیة: ویکرہ اتخاذ الطعام في الیوم الأول والثالث، وبعد الأسبوع، ونقل الطعام إلی القبر في المواسم واتخاذ الدعوة لقراء ة القرآن، وجمع الصلحاء والقراء للختم ، أو لقراء ة سورة الأنعام أو الإخلاص (شامي: ۱۴۸،مطلب في کراھیة الضیافة من أھل المیت، ط: زکریا دیوبند)


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات