عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

India

سوال # 36190

۱۲ وفات اور عاشورہ کے دن کیا کرنا چاہیے؟ ان کی اسلام میں کیا اہمیت ہے کیا اس دن کام دھندہ نہیں کرنا چاہیے؟ میں نے سنا ہے کہ اس دن خوب اچّھا کھانا پینا چاہیے؟ ایسا کیوں؟ براہ کرم، جواب دیں ۔

Published on: Jan 4, 2012

جواب # 36190

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی(ل): 165=83-2/1433

۱۲/ ربیع الاول کے دن کسی خاص عبادت کا ذکر نہیں ملتا، اس کی واضح دلیل یہ ہے کہ خود ۱۲/ ربیع الاول کو یوم وفات ہونے میں اختلاف ہے، مشہور تو یہی کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی ولادت ۱۲/ ربیع الاول کو ہوئی؛ لیکن محققین علماء کی رائے یہ ہے کہ تاریخ ولادت ۸/ یا ۹/ ربیع الاول ہے، اگر اس دن کو عید منانے کا سلسلہ شروع سے جاری ہوتا تو تاریخ ولادت میں اختلاف نہ ہوتا، آج کل لوگوں نے ۱۲/ ربیع الاول کو بطور عید منانا شروع کردیا ہے، اور طرح طرح کے خرافات کرنے لگے ہیں، ان چیزوں سے احتراز ضروری ہے۔ عاشورہ کے دن روزہ رکھنا مسنون ہے، اسی طرح اس دن اہل وعیال پر وسعت کرنے کی فضیلت بعض روایات میں آئی ہے، اس لیے اس دن کھانے پینے میں کچھ وسعت سے کام لینا چاہیے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات