عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

india

سوال # 168145

حضرت مفتی صاحب ہمارے ضلع میں ایک رواج عام ہوتا جا رہا ہے جس کو ہمارے عرف میں وہیچنی بولتے ہے وہیچنی - جب لڑکی اور لڑکے کا رشتہ طے ہوجانے کے بعد لڑکے والے اپنے رشتہ داروں کو لے کر لڑکی والوں کے وہاں جاتے ہیں اور ہر ایک رشتہ دار دعوت کے بعد لڑکی کو چند روپیہ دیتے ہے اور پھر لڑکی والے دوگنا کرکے لوٹاتے ہیں مثلا لڑکے والے سو روپیہ دیں گے تو لڑکی والے دوسوں واپس لوٹائے گے تو کیا یہ مذکورہ صورت سود میں شمار ہوگی؟

Published on: Jan 30, 2019

جواب # 168145

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 550-502/H=05/1440



مخطوبہ لڑکی کو رقم دینا اور اُس کے عوض دوگنا رقم لینا یہ رسم (وہیچنی) واجب الترک ہے اِس رسم میں رقم لینا دینا دونوں ممنوع ہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات