عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

India

سوال # 160792

محمد منیب کے گھر استقرار حمل کی خوشخبری حاصل ہوئی، منیب نے بے انتہا مسرت میں اپنے دو چار قریبی دوستوں میں شیرینی تقسیم کی، لیکن ایک دوست کہنے لگے کہ مجھے یہ عمل سمجھ میں نہیں آیا ابھی تو صرف استقرار حمل ہوا ہے ، ولادت تو نہیں ہوئی ولادت سے پہلے ایک امر موہوم پر خوشی کا اظہار کرنا کیسے درست ہوسکتا ہے ، جبکہ منیب کا کہنا ہے کہ وہ ولادت کی خوشی میں کا اظہار نہیں کر رہے ہیں کہ اسے امر موہوم قرار دیا جائے وہ تو استقرار حمل ہی کا خوشی کا اظہار کر رہے ہیں۔
الغرض پوچھنا یہ ہے کہ کیا استقرار حمل کی کوشی میں چند دوست و احباب میں شیرینی کا تقسیم کرنا از روئے شریعت غلط ہے ؟
برائے مہربانی رہنمائی فرمائیں

Published on: May 14, 2018

جواب # 160792

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:876-869/M=8/1439



اولاد کی خواہش رکھنے والے جوڑے کو استقرار حمل پر خوشی تو ہوتی ہے یہ فطری چیز ہے بالخصوص اس وقت جب کہ مدتوں دعا، دوا اور تدابیر اختیار کرنے کے بعد اس میں کامیابی ملی ہو، اس لیے خوش ہونے پر روک نہیں لیکن اس پر اعلانیہ خوشی منانا اور اس کے اظہار کے لیے دوست واحباب میں شرینی تقسیم فضول ونامناسب ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات