عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

Saudi Arabia

سوال # 148891

شعبان کے مہینے میں یعنی شب برأت جس کو کہتے ہیں اس میں قرآن خوانی کروانا یا کرنا کیسا ہے؟ مثلاً شعبان کے مہینے میں مدرسہ کے بچوں کو دعوت دے کر ۱۰ - ۱۵/ پارہ قرآن پڑھوانا کیسا ہے؟ آیا یہ صحیح ہے یا غلط ؟ حدیث میں اس کے جواز کے متعلق کیا حکم ہے؟

Published on: Mar 5, 2017

جواب # 148891

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 649-570/H=6/1438



اجتماعی مروجہ قرآن خوانی خواہ شب برأ ت (ماہ شعبان) میں کی جائے یا کروائی جائے چاہے کسی اور دوسرے مہینہ اور موقعہ پر کرائی جائے درست نہیں بلکہ خلافِ سنت ہے باقی فی نفسہ قرآن کریم کی تلاوت کا اہتمام جس قدر ہوسکے ہر وقت ہر مسلمان کو کرنا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات