عقائد و ایمانیات - بدعات و رسوم

????????

سوال # 148366

ہمارے یہاں ایک مفتی صاحب اذان فجرکے بعد سے جماعت کے 10/15 منٹ پہلے تک مسجد میں بتیاں بجھاکر باجماعت بہت زور آواز سے ذکر کرتے ہیں اور خود مفتی صاحب لاؤوڈ اسپیکر کے ذریعہ اسکا لیڈ(پڑھانا) دیتے ہیں، ہمیں بھی اس میں شریک ہونے کو کہاگیا لیکن دوسرے بعض علماء کہتے ہیں کہ یہ طریقہ صحیح نہیں تو اس صورت میں ہمیں کیا کرنا چاہئے ؟

Published on: Feb 23, 2017

جواب # 148366

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 430-437/B=5/1438



مسجد میں فجر کے وقت فجر سے پہلے لاوٴڈ اسپیکر کے ساتھ بالجہر ذکر کرنا درست نہیں، مسجد میں بہت سے لوگ آکر سنتیں پڑھتے ہیں، کچھ تلاوت کرتے ہیں، کچھ تسبیحات پڑھتے ہیں، زور سے ذکر کرنے کی وجہ سے ان لوگوں کے معمولات میں رکاوٹ پیدا ہوگی اور لاوٴڈ اسپیکر سے ذکر کرنے کی صورت میں ریاکاری اور دکھاوا بھی پایا جاتا ہے۔ ذکر کرنے والوں کو چاہیے کہ وہ اپنے اپنے گھروں میں ہلکی آواز کے ساتھ ذکر بالجہر کرلیا کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات