معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 160128

زید کی دو بیویاں تھیں پہلی بیوی سے ایک لڑکا ہے اور دوسری بیوی سے ۳ لڑکے ہیں، دوسری بیوی کے ۳ لڑکوں میں سے ایک لڑکا فوت ہو گیا اب فوت شدہ لڑکے کے وارث ۲ سگے بھائی ہیں اور ایک سوتیلا بھائی ہے میت کے ترکے میں موروثی جائداد کے علاوہ اس کی اپنی بنائی ہوئی جائداد بھی ہے ۔ سوال یہ ہے کہ میت کے ترکے میں اس کے دونوں سگے بھائی ہی حقدار ہیں یا سوتیلے بھائی بھی حصہ پائیں گے ۔

Published on: Mar 31, 2018

جواب # 160128

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:816-700/sd=7/1439



حقیقی بھائی کی موجودگی میں سوتیلا بھائی محروم ہوتا ہے ، لہذا صورت مسئولہ میں فوت شدہ لڑکے کے ورثاء میں حقیقی بھائیوں کی وجہ سے سوتیلا بھائی محروم ہوگا، باقی شرعی حصوں کی تعیین کے لیے مرحوم لڑکے کے ورثاء کی تفصیل لکھ کر حکم معلوم کریں ۔



---------------------------



یعنی مرحوم لڑکے کے والدین بیوی بچوں میں سے کوئی مرحوم کے انتقال کے وقت باحیات تھا یا نہیں؟ جو جو باحیات رہے ہوں ان کی صراحت کریں۔ (د)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات