معاملات - وراثت ووصیت

Pakistan

سوال # 157370

والدہ کے انتقال پر میراث کی تقسیم کا طریقہ کار کیا ہے ؟ اگر شوہر اور تین بیٹے ہوں تو ۵۰۰۰۰۰ کی تقسیم کیسے ہو گی؟

Published on: Jan 3, 2018

جواب # 157370

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:416-302/sn=4/1439



اگر مرحومہ کے والد، والدہ کا انتقال ان سے پہلے ہی ہوچکا تھا نیز مرحومہ نے کوئی بیٹی نہیں چھوڑی ہے تو صورت مسئولہ میں بہ شمول یہ پانچ لاکھ روپئے جو کچھ بھی ترکہ (مثلاً زمین،مکان، زیورات، اور دیگر رقم کے اثاثے) مرحومہ نے بہ وقت وفات اپنی ملکیت میں چھوڑا ہے، سب کے بعد ادائے حقوق متقدمہ علی الارث کل ۴/ حصے کیے جائیں گے، جن میں سے ایک حصہ شوہر کو اور ایک ایک حصہ تینوں بیٹیوں میں سے ہرایک کو ملے گا۔ نقشہ تخریج حسب ذیل ہے:



زوج = ۱



ابن = ۱



ابن = ۱



ابن = ۱



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات