معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 155263

کیا فرماتے ہیں علماء دین و مفتیان کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں، مسئلہ ۔ایک عورت کا انتقال ہوگیاہے ، اس کے 50000پچاس ہزار روپئے ہیں، اور اس کی وراثت میں اپنے شوہر، 2 لڑکے اور 1 لڑکی ہیں، تو ان کے درمیان یہ مال کیسے تقسیم ہوگا؟ مسلک حنفی کے اعتبار سے جواب مطلوب ہے ۔

Published on: Nov 1, 2017

جواب # 155263

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:66-55/M=2/1439



صورت مسئولہ میں اگر عورت مرحومہ کے ماں باپ میں سے کوئی بھی حیات نہیں ہے صرف مذکورہ ورثہ ہی حیات ہیں تو مرحومہ کا پورا مملوکہ ترکہ حقوق مقدمہ علی الارث کی ادائیگی کے بعد 20 سہام میں منقسم ہوگا جن میں سے ایک ربع یعنی 5 سہام شوہر کو اور 6,6 حصے دونوں لڑکوں میں سے ہرایک کو اور 3 سہام لڑکی کو ملیں گے۔ پچاس ہزار میں سے ساڑھے بارہ ہزار شوہر کو اور پندرہ پندرہ ہزار دونوں لڑکوں میں سے ہرایک کو اور ساڑھے سات ہزار لڑکی کو ملیں گے۔



زوج = 12500



ابن = 15000



ابن = 15000



بنت = 7500



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات