متفرقات - حلال و حرام

Pakistan

سوال # 162062

ایک سوال عرض ہے کہ میری بریانی کی دوکان ہے بریانی کی پلیٹ اندازے سے دیتے ہیں زیادہ رش(بھیڑ) کی وجہ سے تول ناممکن ہے اندازے میں ایک دوسرے گاہک کے پلیٹ میں 19 بیس کا فرق ہوجاتا ہے جو کہ قصدا نہیں ہوتی حتی الامکان کوشش ہوتی ہے کہ پورا ہوجائے لیکن پھر بھی انسانی ہاتھ ہے کمی بیشی ہو جاتی ہے تو برائے کرم یہ معلوم کرنا ہے کہ اس میں ناف تول کی پکڑ تو نہیں ہوگی ؟ جائز ہے یا ناجائز ؟ تول کی ناممکن ہونے کی وجہ سے کیا طریقہ اختیار کیا جائے یہ طریقہ صحیح ہے یا نہیں ؟

Published on: Jul 2, 2018

جواب # 162062

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1191-979/sd=10/1439



گاہکوں سے جتنے وزن کی قیمت لی جاتی ہے ، کسی گاہک کو اُس سے کم بریانی دینا جائز نہیں ہے ،مثلا: اگر آدھا کلو بریانی کی قیمت لی گئی، تو آدھا کلو بریانی دینا ضروری ہے ، جلدی میں آدھا کلو سے کم دینا ناجائز ہوگا، باقی کسی گاہک کو اُس کی مقدار سے کچھ زیادہ چلی جائے ، تو اس میں کوئی حرج نہیں ہے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات