متفرقات - حلال و حرام

Indian

سوال # 147132

وقف کی جائیداد حاصل کرنے کے لیے زکاة ، صدقہ، چندہ لیا جا سکتا ہے؟ کروڑوں کی وقف پراپرٹی ہے، جس میں میرے علاوہ او رحصہ دار بھی ہیں، میں غریب ہونے کی وجہ سے کورٹ اور دوسری جگہ پر خرچ نہیں کرسکتا، اس لیے میں نے ایک ٹرسٹ رجسٹر کیا ہے، جس کے تحت میں چندہ کرتا ہوں، جس میں زکاة ، صدقہ وغیرہ کی رقم ہوتی ہے میں یہ نیت کر چکا ہوں کہ وقف پراپرٹی ملنے پر پوری رقم جو میں نے کیس جیتنے کے لیے خرچ کی ہے ادا کروں گا۔
برائے مہربانی تفصیل سے جواب دیں۔

Published on: Jan 9, 2017

جواب # 147132

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 304-241/D=4/1438



مذکور فی السوال مقصد کے لیے زکاة، صدقہ وغیرہ کی رقم کا چندہ کرنا جائز نہیں نہ ہی زکاة، صدقہ کی رقم وقف پراپرٹی واگذار کرانے کے لیے مقدمہ میں خرچ کرنا جائز ہوگا، اس طرح کرنے سے زکاة دہندگان کی زکاة ادا نہ ہوگی۔ زکاة، فطرہ، صدقہ واجبہ کی رقم غربا مساکین کو مالک بناکر دینا واجب ہے، بغیر اس کے زکاة ادا نہیں ہوتی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات