عبادات - حج وعمرہ

Saudi Arabia

سوال # 147188

اللہ پاک سے امید ہے کہ آپ خیریت سے ہونگے ، دیگر احوال آنکہ ایک مسئلہ درپیش ہے جس میں آپکی رہنمائی کی اشد ضرورت ہے ۔میں ریاض سعودی عرب میں ملازمت کرتا ہوں اور اللہ کی توفیق سے اکثر عمرہ کے لیے جانا ہوتا ہے ۔ جس کے لیے اکثر عمرہ کی کتابوں کا مطالعہ چلتا رہتا ہے ،ایک کتاب (حج و عمرہ)از مولانا یوسف لدھیانوی رحمة اللہ علیہ - ترتیب مولانا محمد یحیٰ لدھیانوی(پاکستان) میں پڑھا کہ جو بھی آفاقی ھوگا اسکو چاہیے کہ احرام میقات سے باندھے نہ کے مسجد عائشہ سے ،اور مسجد عائشہ صرف مکہ والوں کے لیے ہے ،جو آفاقی مسجد عائشہ سے احرام باندھے گا اس پر دم واجب آے گا۔ تواب سوال یہ ہے کہ پاکستان سے یا میقات کے باہر کہیں سے بھی عمرہ کے لیے آئے تو میقات سے احرام باندھ لیا اور عمرہ بھی ادا کر لیا تو اب ارادہ کیا کہ ایک عمرہ مزید کیا جائے تو دوبارہ احرام باندھنے کے لیے مسجد عائشہ جا سکتا ہے یا دوبارہ نزدیکی میقات پہ جانا پڑے گا،کیونکہ اکثر ہمارے بھائی مسجد عائشہ سے ہی احرام باندھ لیتے ہیں ۔تو کیا انکا احرام معتبر ہوگا؟اور اکثر علما کرام اس کو صحیح مانتے ہیں، حالانکہ اماں عائشہ نے بوجہ مجبوری وہاں سے احرام باندھا تھا،اگر مسجد عائشہ سے احرام باندھنے کی اجازت اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلام نے فرمائی ہے تو باہرکے ممالک(انڈیا، پاکیستان،بنگلہ دیش، وغیرہ( سے آنے والے معتمرین اصل میقات کی بجائے مسجد عائشہ سے احرام باندھ سکتے ہیں، برائے مہربانی میری اس مشکل کو آسان فرما دیں تاکہ دل سکون ناصیب ہو اور بندہ کو بار بار عمرہ کی سعادت نصیب ہو جائے ۔آپ سے استدعا ہے کہ مہربانی فرما کر تفصیلاً جواب دیں۔

Published on: Feb 2, 2017

جواب # 147188

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 376-409/L=5/1438



اگر آفاقی شخص میقات سے احرام باندھ کر افعال عمرہ ادا کرکے مکہ یا حدودِ حرم میں ہی رکا ہو اگر وہ دوبارہ عمرہ کرنا چاہے تو وہ مکی کے حکم میں ہوگا اور وہ حل میں کسی بھی جگہ جاکر عمرہ کا احرام باندھ کر دوسرا عمرہ کرسکتا ہے؛ البتہ تنعیم (مسجد عائشہ) سے جاکر احرام باندھنا افضل اور بہتر ہے۔ والمیقات لمن بمکة یعني من بداخل الحرم للحج الحرم وللعمرة الحل لیتحقق نوع سفر، والتنعیم أفضل․ (درمختار) وفيالشامي: والمراد بالمکي من کان داخل الحرم سواء کان بمکة أولا وسواء کان من أہلھا أو لا․ (شامي: ۳/۴۸۴)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات