عبادات - حج وعمرہ

india

سوال # 147160

میں اپنی ساس کے طرف ایک سوال کرنا چاہتاہوں، وہ حج کے لیے جانا چاہتی ہیں، لیکن ان کا بیٹا بیرون ملک ہے، اس لیے محرم کا مسئلہ درپیش ہے، میری ساس اپنے شوہر کی دوسری بیوی ہیں، اور پہلی بیوی کی بیٹی اور اس کا بیٹا حج کے لیے جارہے ہیں، کیا میری ساس ان کے ساتھ جاسکتی ہیں؟ براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔ جواب کا انتظار رہے گا۔

Published on: Dec 28, 2016

جواب # 147160

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 309-255/H=3/1438



 



پہلی بیوی کا بیٹا اگر آپ کے سسر ہی کا بیٹا ہے تو آپ کی ساس اُس کی سوتیلی ماں ہیں اور سوتیلی ماں سے نکاح ہمیشہ کے لیے حرام ہے پس آپ کی ساس اپنے سوتیلے بیٹے کے ساتھ حج کو جاسکتی ہیں چونکہ وہ سوتیلا بیٹا ساس کے حق میں محرمِ شرعی ہے اگر وہ بیٹا آپ کے سسر کا بیٹا نہ ہو بلکہ مثلاً سسر کی پہلی بیوی کے پہلے شوہر کا بیٹا ہو تو ایسی صورت میں حکم دوسرا ہوگا اگر ایسا ہو تو اس بیٹے کا کوئی اور رشتہ بھی آپ کی ساس سے ہو تو ا س کی تفصیل لکھ کر دوبارہ سوال کرلیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات