عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

india

سوال # 169504

جیسا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے یہ ثابت ہے کہ آپ نے گدھے کی سواری کی ہے،کیا یہ آپ کی سنت ہوئی؟کیا گدھے کی سواری کرنا سنت ہوا؟
براہ کرم جواب مرحمت فرمائیں۔

Published on: Mar 25, 2019

جواب # 169504

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 673-577/D=07/1440



آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا گدھے پر سواری کرنا متعدد احادیث سے ثابت ہے، البتہ سنت کی دو قسمیں ہیں۔ (۱) سنن ہدی ۔ (۲) سنن زوائد۔



سنن ہدی: وہ ہے جس کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے بطور عبادت کیا ہے، اور سنن زوائد وہ ہے جس کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے بطور عادت کیا ہے، پس آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا گدھے پر سواری کرنا سنن زوائد میں سے ہے، سنن ہدی میں سے نہیں ہے، اور عرب میں گدھے پر سواری کرنا کوئی عیب کی بات نہیں تھی، بڑی حیثیت کے حضرات اس پر سوار ہوتے تھے، جامعہ ازہر کے شیخ کی تنخواہ کے ساتھ ان کے گدھے کی تنخواہ بھی دی جاتی تھی، لیکن ہندوستان میں گدھے پر سواری کرنا معیوب سمجھا جاتا ہے، اگر کوئی سنت کی نیت سے گدھے پر سوار ہوگا، اور لوگ گدھے پر سوار ہونے کو حقارت کی نگاہ سے دیکھیں گے تو اس سنت کو حقیر سمجھنے والے کے سلب ایمان کا خطرہ ہے، پس ایسی صورت میں اس سنت پر عمل نہ کرنا بہتر ہے۔ السنة ماواظب النبی - علیہ السلام- علیہ مع الترک أحیاناً ، فإن کانت المواظبة المذکورة علی سبیل العبادة فسنن الہدی ، وإن کانت علی سبیل العادة فسنن الزوائد (شرح وقایة: ۱/۶۴، ط: دارالعلوم دیوبند) ، فتاوی محمودیہ: ۴/۴۹۲، ط: دارالمعارف دیوبند)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات