عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

India

سوال # 169012

میں نے یہ حدیث بہت ساری جگہوں پر لکھی دیکھی ہے کہ پاکی ایمان کا حصہ ہے، کیا یہ حدیث صحیح ہے؟ یہ صحیح حدیث ہے یا ضعیف ہے ؟

Published on: Mar 25, 2019

جواب # 169012

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:701-653/L=7/1440



مذکورہ بالا حدیث صحیح ہے،اس حدیث کو امام مسلم نے اپنی صحیح میں (۱/۱۱۸کتاب الطہارة،باب فضل الوضوء) اور امام دارمی نے اپنی سنن میں (کتاب الطہارة،باب ماجاء فی الطہور:۱/۵۱۸،ط:دارالمغنی )اور امام احمدنے اپنی مسند میں (۳۷/۵۴۲،رقم ۲۲۹۰۸،ط:الرسالة)حضرت ابو مالک اشعریسے مرفوعاً ان الفاظ میں ذکر کیا ہے ۔عن أبی مالک الأشعریقال:قال رسول اللہ ﷺ :الطہور شطر الإیمان الخ مسندِ احمد کے حاشیہ میں مذکورہ حدیث کے تحت ذکر کیا گیا ہے کہ یہ حدیث صحیح ہے ،نیز امام بغوینے بھی “شرح السنة” میں مذکورہ بالا حدیث کے تحت ذکر کیا ہے کہ یہ حدیث صحیح ہے ۔(شرح السنة للبغوی ،کتاب الطہارة،باب فضل الوضوء :۳۱۹/۱،ط:المکتب الإسلامی)اور امام ترمذینے اپنی سنن میں اس حدیث کو نقل فرمانے کے بعد لکھا ہے :ہذا حدیث صحیح (ترمذی شریف،کتاب الدعوات ،باب بلا ترجمة رقم ۳۵۱۷)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات