عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

India

سوال # 165000

حضرت مجھے یہ معلوم کرنا ہے کہ کیا اہل حدیثوں نے حدیث میں پھیر بدل کر دیا ہے ؟ ہمارے محلے میں کچھ لوگ اہل حدیث ہیں انکا نماز کا طریقہ بھی الگ ہے بہت بار بحث بھی ہو چکی ہے نئی نئی حدیث بتاتے ہیں۔ ہمارے محلے کے امام صاحب کا کہنا ہی ہے کہ ان لوگوں نے حدیسیں گڑھ لی ہیں۔ مجھے یہ معلوم کرنا ہے کہ کیا اہل حدیثوں نے حدیث میں پھیر بدل کر دیا ہے اور اپنی حدیثیں بنا لی ہیں؟ اور کیا بخاری اور مسلم قرآن کے بعد سب سے معتبر کتاب ہیں؟
جواب جلد از جلد دینے کی کوشش کریں برائے مہربانی ،کیوں کہ ہمارے محلے کے کچھ لوگ ان کی باتوں سے متاثر ہونے لگے ہیں۔

Published on: Sep 19, 2018

جواب # 165000

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1485-1176/B=1/1440



غیر مقلدوں نے اپنا ایک الگ نظریہ من گھڑت یہ بنا رکھا ہے کہ جو حدیث مرفوع ہے اس کا سلسلہ سند رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تک پہنچتا ہے وہ حدیث ہے اور وہی قابل عمل ہے اور جس حدیث کو صحابہ کرام نے فرمایا ہے وہ حدیث نہیں، نہ ہی قابل عمل ہے، اسی طرح وہ یہ بھی کہتے ہیں کہ ہم صحیح بخاری کی حدیث پر عمل کرتے ہیں۔ تیسرا نظریہ یہ ہے کہ جو ان کے نظریہ کے خلاف حدیثیں ہیں ان سب کو ضعیف کہہ دیتے ہیں۔ اسلاف کو اور ائمہ کو برا بھلا کہتے ہیں۔ یہ فرقہ خود بھی گمراہ ہے اور دوسروں کو بھی گمراہ کرتا ہے۔ بہت سے شرعی احکام میں اپنی من مانی عمل کرتے ہیں اور حدیث کو چھوڑ دیتے ہیں جیسے جمعہ کے دن اردو میں خطبہ دیتے ہیں۔ جب کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے اور صحابہ کرام سے عربی کے علاوہ دوسری زبان میں خطبہ دینا ثابت نہیں۔ اور مثلاً تین طلاقیں دے کر پھر بیوی کو رکھ لیتے ہیں جب کہ تین طلاق کے بعد کسی حدیث میں حضور نے رجعت کا حکم نہیں دیا ہے۔ بیشمار مسائل ان کے ایسے ہیں جو حدیث کے خلاف ہیں اور وہ ان پر عمل کرتے ہیں۔ تفصیل کے لئے گھمن صاحب کی کتاب یا جمعیة علماء ہند کی طرف سے مجلس تحفظ سنت کی طرف سے شائع شدہ رسائل کا مطالعہ کیجئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات