عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

India

سوال # 164652

"میری امت کے علماء بنی اسرائیل کے انبیاء میں مانند ہے " کیا یہ حدیث صحیح ہے ؟ وضاحت فرمائیے ۔

Published on: Sep 20, 2018

جواب # 164652

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1306-971/SN=1/1440



یہ روایت بے اصل ہے، کسی معتبر کتاب میں یہ روایت موجود نہیں ہے۔ ”علماء أمتی کأنبیاء بنی اسرائیل“ ”قال السیوطی فی الدرر: لا أصل لہ، وقال فی المقاصد: قال شیخنا یعنی ابن حجر: لا أصل لہ، وقبلہ الدمیری والزرکشی ، وزاد بعضہم: ولا یعرف فی کتاب معتبر الخ (کشف الخفاء ومزیل الإ لباس: ۲/۷۴، رقم: ۱۷۴۴)۔



------------------------



جواب صحیح ہے اور فتاوی محمودیہ (۳/۴۶، ۴۷) میں مزید یہ ہے: البتہ العلماء ورثة الأنبیاء کو ابوداوٴد ، ترمذی ، احمد وغیرہ ائمہ کرام نے روایت کیا ہے، ابونعیم نے مرفوعاً أقرب الناس من درجة النبوة أہل العلم والجہاد کو روایت کیا ہے۔ (ن)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات